Ek Gulam allah ka wali ka raaz in urdu

//Ek Gulam allah ka wali ka raaz in urdu

Ek Gulam allah ka wali ka raaz in urdu

دو آقائوں کی خدمت !
از ، جمال احمد صدیقی اشرفی شیل پھاٹا !
ایک شخص نے ایک غلام خریدا ، غلام نے کہا اے مالک ، میری تین شرطیں ہیں !
( 1) جب نماز کا وقت آئے تو مجھے اس کے ادا کرنے سے نہ روکنا ( 2) دن کو مجھ سے جو چاہو کام لو مگر رات کو نہیں –
( 3) مجھے ایسا کمرہ دو جس میں میرے سوا کوئ نہ آئے –
مالک نے تینوں شرطیں منظور کرتے ہوئے کہا گھر میں رہنے کے لئے کوئ کمرہ پسند کرلو غلام نے ایک خراب ساکمرہ پسند کرلیا ،
مالک بولا تونے خراب کیوں پسند کیا ؟ غلام نے جواب دیا اے مالک یہ خراب کمرہ اللہ کے یہاں چمن ھے چنانچہ وہ دن کو مالک کی خدمت کرتا اور رات کو اللہ کی عبادت میں مشغول ہوجاتا – ایک رات اس کا مالک وہاں سے گزرا تو اس نے دیکھا کمرہ منور ھے ، غلام سجدہ میں ھے اور اس کے سر پر ایک نورانی قندیل معلق ھے اور وہ آہ وزاری کرتے ہوئے کہہ رہاھے ، یا الہی تونے مجھ پر مالک کی خدمت واجب کردی ھے اور مجھ پر یہ ذمہ داری نہ ہوتی تومیں صبح وشام تیری عبادت میں مشغول رہتا ، اے اللہ میرا عزر قبول فرمالے مالک ساری رات اس کی عبادت دیکھتا رہا یہاں تک کہ صبح ہوگئی اور قندیل بجھ گئی اور کمرے کی چھت حسب سابق ہموار ہوگئی وہ واپس لوٹا اور اپنی بیوی کو سارا ماجرا سنایا –
جب دوسری رات ہوئ تو وہ اپنی بیوی کوساتھ لیکر وہاں پہنچ گیا ، تو دیکھا غلام سجدہ میں تھا اور نورانی قندیل روشن تھی وہ دونوں دروازے پر کھڑے ہوگئے ، اور ساری رات اسے دیکھ کر روتے رھے ، جب صبح ہوئ تو انھوں نے غلام کو بلاکر کہا ہم نے تجھے اللہ کے نام پر آزاد کردیا ھے تاکہ تو فراغت سے اس کی عبادت کرسکے ، غلام نے اپنے ہاتھ کو آسمان کی طرف اٹھائے اور کہا یا صاحب السر ان السر قد ظھرا –


ولا ارید حیوتی بعد ما اشتھرا –
اے صاحب راز ، راز ظاہر ہوگیا ، اب میں اس افشائے راز اور شہرت کے بعد زندگی نہیں چاہتا – پھر کہا اے الہی مجھے موت دے دے اور گرکرمرگیا – واقعی صالح ، عاشق اور طالب مولی لوگوں کے حالات ایسے ہی تھے –
ایک وہ تھے اور ایک ہم ہیں کہ کاروبار کیوجہ سے نماز کے لئے فرست ہی نہیں ملتی تعجب ھے ؟
اللہ تعالی ہم سب کو سیدھے راستے پر چلنے کی توفیق عطا فرمائے امین بجاہ نبئ الکریم

Leave A Comment